ہندوستان اور پاکستان کو اچھے دوست بنتے دیکھنا میرا خواب: ملالہ یوسف زئی

Sunday, 28 Feb, 8.42 pm

انٹرنیشنل ڈیسک: امن کے نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی نے اتوار کے روز کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کو اچھے دوست بنتے دیکھنا ان کا ان کا خواب ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کو سر حدوں میں رکھنے کی پالیسی اب مزید کام نہیں کرتی اور ہندوستان اور پاکستان کے عوام امن سے رہنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اقلیتوں کو ہر ملک میں تحفظ کی ضرورت ہے ، خواہ وہ پاکستان ہو یا ہندوستان ، یہ مسئلہ مذہب سے نہیں بلکہ حقوق کی پامالی سے منسلک ہے اور اسے سنجیدگی سے لیا جانا چاہئے۔
بچوں کی تعلیم کی حمایت کرنے والی پاکستانی کارکن یوسف زئی کو اکتوبر 2012 میں طالبان عسکریت پسندوں نے ان کے سر میں گولی مار دی تھی ، لیکن وہ زندہ بچ گئی تھیں ، جو کسی معجزے سے کم نہیں تھا۔ یوسف زئی نے کہا کہ انٹرنیٹ خدمات پر پابندی عائد کرنا اور ہندوستان میںپرامن احتجاج کرنے والوں کارکنان کی خبر تشویشناک ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ حکومت عوام کے مطالبات پر دھیان دینے کو یقینی بنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ میرا خواب یہ ہے کہ میں ہندوستان اور پاکستان کواچھے دوست بنتے دیکھوں ، تاکہ ہم ایک دوسرے کے ممالک میں جاسکیں۔ آپ پاکستانی ڈرامے دیکھنا جاری رکھ سکتے ہیں ، ہم بالی وڈ فلمیں دیکھنا اور کرکٹ میچوں سے لطف اٹھا نا جری رکھ سکتے ہیں۔
جے پور لٹریچر فیسٹیول (جے ایل ایف)کے اختتامی دن پر وہ اپنی کتاب ' آئی ایم ملالہ : دی اسٹوری آف دی گرل ہو اسٹوڈ اپ فار ایجوکیشن اینڈ شاٹ بائی دی آف طالبان' کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کر رہی تھیں ۔ یہ تقریب کا اہتمام ڈیجیٹل انداز میں کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ آپ ہندوستانی ہیں اور میں پاکستانی ہوں اور ہم پوری طرح سے ٹھیک ہیں ، پھر ہمارے درمیان یہ نفرت کیوں پیدا ہوئی ؟ سرحدوں اور پھوٹ ڈالو اور راج کرو کی پرانی پالیسی ...